Jump to content
URDU FUN CLUB

Parvez

VIP GOLD PRO
  • Content Count

    205
  • Donations

    $0.00 
  • Joined

  • Last visited

  • Days Won

    1

Parvez last won the day on November 10

Parvez had the most liked content!

Community Reputation

316

Profile Information

  • Gender
    Male
  • Location

Recent Profile Visitors

The recent visitors block is disabled and is not being shown to other users.

  1. چلیں جی وقت ہے تو ایک مزے دار واقعہ شئیر کردیتا ہوں. میں اور میرا دوست جوہر موڑ کی ایک کال گرل جگہ پر گئے. آنٹی کا نام ندا رکھ لیں. اس سے ملاقات کیسے ہوئ یہ پھر کسی اور واقعہ میں بتاؤں گا. جوانی میں ہی اس نے بہت کچھ حاصل کرلیا. تیز سمجھ دار. ندا کی جگہ پر گئے. فلیٹ میں چوتھی منزل پر جگہ پر تھی. لڑکیاں دکھائیں جس میں سے ایک پسند آگئ. سوچ رہا ہوں کہ لڑکی کون سی تھی آجا یاد آجا یاد. ہمممممم نہیں یاد آرہا خیر جو بھی تھی میں نے کام کیا. باہر آیا. ندا کے ساتھ بیٹھ کر باتیں کرنے لگ گیا بہت عرصہ بعد ملاقات ہوئ تھی. وہ سننے والی اور سنانے والی تھی. وہ کرسی پر تھی میں اس کی ٹانگ کے ساتھ لگ کر ایسے باتیں کررہا تھا جیسے میری رشتہ دار ہو. ایسے میں ایک شخص آیا. میں نے جیسے ہی اسے دیکھا میرا کلیجہ منہ کو آگیا. وہ میرے علاقہ کا تھا جہاں میں کراچی میں رہتا ہوں. وہ باقاعدہ میرے جاننے والا نہیں تھا لیکن گزرتے چلتے ایک دوسرے کے چہرے سے شناسائ تھی. اس نے مجھے دیکھا اور طنزیہ کہا کہ حاجی صاحب ادھر کدھر. میرا دوست صورت حال کو سمجھ گیا فوراً کہا کہ جہاں آپ طواف کرنے آئے ہیں ہم بھی وہیں پھیرے لگانے آئے ہیں. طواف کی بات اس نے جلدی میں کہی جو کہا ذکر کردیا اس کا غلط مطلب نہ نکالیے گا. پیشگی معذرت . وہ مسکرا کر خاموش ہوگیا. وہ بھی کام کرچکا تھا باہر آیا کار میں بیٹھا مجھے کہا میرے ساتھ چلو میں نے کہا نہیں دوست کے ساتھ ہوں. وہ پھر چلا گیا. میں بڑا پریشان ہوا دوست نے تسلی دی اس نے کہا وہ کون سا یہاں کسی نیک کام سے آیا تھا وہ بھی اسی کام سے آیا تھا فکر مت کرو کچھ نہیں ہوتا. کچھ دنوں بعد میرا اور اس کا آمنا سامنا ہوا موڑ پر اپنے رہائشی علاقہ میں.وہ بائیک پر تھا میں پیدل . اس نے بائیک روک کر سلام کیا میں نے ہاتھ ملایا. اس نے مسکرا کر کہا پہچانا. میں نے کہا نہیں. اس نے دوبارہ یاد دلانے کی کوشش کی میں جان بوجھ کر انجان بنا اور صاف انکار کر دیا کہ میری تمہھاری اس جگہ پر ملاقات ہوئ تھی. وہ بھی ایک لمحے کو شش و پنج میں پڑگیا کہ کہیں واقعی میں تو غلط نہیں. ہا ہا.میں نے سوچا کہ اگر اقرار کرلیا تو خواہ مخواہ کی جان پہچان بنانا پڑے گی جس کا کوئ فائدہ نہیں. دوبارہ پھر کئ ماہ ملاقات نہیں ہوئ. مجھے نہیں پتا تھا کہ وہ رہتا کہاں تھا. پھر کبھی نہیں ملا. یقیناً چلے گیا سبق :- ایسی جگہوں پر بہت احتیاط کی ضرورت ہے. اتفاق کبھی بھی ہوسکتا ہے. کہیں بھی جائیں پوری تسلی کرکے جائیں. یہ نہ ہو کہ شرمندگی اٹھانی پڑے. رشتہ دوستیاں خراب ہوں.
  2. جب آنٹی کے ہاں آنا جانا کافی بڑھ گیا تو ایک اعتماد کی فضا قائم ہوگئ نام آپ شمائلہ رکھ لیں. یہ وہی آنٹی ہے جس کو ایک بار بچایا تھا جب چھاپا پڑ گیا تھا. اس سے واسطہ کیسے پڑا وہ بتادیتا ہوں ہم کال گرل جگہ دیکھنے کے لیے تگ ودو کر رہے تھے. دوست کو ایک نمبر ہاتھ لگا ہم بتائ ہوئ جگہ اسٹارگیٹ پہنچے. جب لڑکی دیکھی تو وہ تو بڈھی 50 سال کی کالی عورت نکلی. ہم نے تو انکار کردیا. جس کا گھر تھا وہ اس سے اچھی تھی. ہم نے کہا کہ ہم تو نہیں کریں گے واویلہ کرنے لگ گئ جسکا گھر تھا اس عورت نے بات کو سمجھا سمجھ دار تھی ہم نے تو کہا کہ اس نے کہا کہ 35 سال کی ہوں اور آپ خود دیکھ لیں. اس نے اسے برا بھلا کہا وہیں پر وہ لڑکی تھی جسکا نام شمائلہ ہے اس وقت کی عمر 30 کے آس پاس ہوگی. ہم نے کہا کہ اسے کرلیتے ہیں تو اسے کیا میں نے نمبر لے لیا. کرتے کرتے اس نے اپنا کام شروع کردیا. اب وہ اپنا مکان بناچکی ہے. دبئ کے بھی اس کے ٹور لگتے رہتے ہیں. بال بچے دار ہے میاں بھی ساتھ ہی ہے. اس نے ایک دفعہ اپنے گھر بلایا جو کہ بہت دور تھانام یاد نہیں آرہا لی مارکیٹ سے بھی آگے . بعد میں اس کے اپنے گھر تین چار دفعہ گیا. کام وہ ملیر کے مضافاتی علاقہ میں کرتی ہے. اس نے کہا کہ چھوٹی بچی آئ ہے کام میں نئ ہے میں نے کہا جسم میں کچھ ہے بھی اس نے کہا کہ ہاں اچھی ہے. میں وہاں پہنچ گیا سوا گھنٹہ لگ گیا جاتے ہوئے. اس کے گھر پہنچا. گھر تو گھر ہوتا پے بچوں سے ملا اس کے. بیڈ روم میں بٹھا دیا. لڑکی کے بارے میں بتانے لگی کہ کسی نے اس کی سیل توڑدی ہےاسےسیکس کا چسکا لگ گیا ہے جس نے سیل توڑی بڑی عمر کا تھا اس نے کچھ ماہ بہت چودا 15 سال عمر ہوگی پنجاب سے تھی . میں سوچنے لگ گیا کہ یار پتا نہیں کیسی ہوگی. ویسے مجھے مزاجاً چھوٹی لڑکیوں پر شہوت بہت آتی ہے اس بارے میں کسی اور واقعہ میں بتاؤں گا کہ آخر کیوں . مجھے شمائلہ آنٹی نے بتایا کہ اس کی امی یا رشتہ دار اسے لائے ہیں میں بڑا حیران ہوا کہ اپنے خون والے رشتہ داروں نے ایسا کیا. لیکن دن بدن جبزندگی کے مختلف روپ دیکھے تو اب حیرانگی نہیں ہوتی. میں ان دنوں اسپرے کے تجربات کر رہا تھا. آخری دفعہ جب اتنا وقت لیا فارغ بھی نہیں ہوا جو کہ آدھا پونا گھنٹہ پہلے اسپرے لگایا تھا تو اب ذہن میں آیا کہ 10 منٹ پہلے لگاتا ہوں اس طرح شاید فائدہ ہوجائے. میں نے آنٹی کو کہا کہ واش روم جانا ہے واش روم میں گیا. اسپرے کو صرف لنڈ کی ٹوپی پر لگایا. میں پھر کمرہ میں آگیا. لڑکی جب کمرہ میں آئ تو میری آنکھیں پھٹی کی پھٹی رہ گئیں. اس کے پستان اففففففففف. کیا سینہ تھا. ایک بھرپور سینہ .پتلی سی تنگ شرٹ پہنی تھی اور ٹراوزر. ایسے لگ رہا تھا ممے باہر آجائیں گے وہ ڈاکٹر صاحب لکھتے ہیں نہ کہ ابل پڑے بالکل ویسے ہی.قد اس کا چھوٹا تھا بال گنگھریالے . میں نے دل میں کہا واہ پرویز آج تومزے آنے والے ہیں.آنٹی چلی گئ اس سے کچھ باتیں کی. پھر ہاتھ میں لیا اس کے ہاتھ تھامے کسنگ کی اسے گلے لگایا اس کے حسین مموں کو ہاتھ لگایا دبایا . میں نے پھر اس کی شرٹ سے اندر ہاتھ ڈالا اور اس کے ننگےممے کو پکڑلیا سہلایا. افففف. لنڈ میں تو ایسی آکڑ آئ. اف. میں نے پھر اس کی شرٹ اتار دی. مموں کو دیکھ کر دنگ رہ گیا. کیا گول ممے بھرے ہوئے تراشے ہوئےسانولے سے. میں نے جی بھر کر انہیں چوما چوسا نپل جو کہ ہلکے سے ابھرے ہوئے تھے کاٹا. جتنا انہیں پیار کرسکتا تھا کیا. اس کے چھوٹے کولہوں کو دبایا ہلکی تھی اٹھا کر لٹادیا. کنڈم چڑھایا. اور لنڈ اندر ڈال دیا. چند جھٹکے لگائے چوت شروع میں تنگ محسوس ہورہی تھی پھر رواں ہوں گی. لنڈ کا اگلا حصہ مجھے سن محسوس ہورہا تھا. میں نے چند جھٹکے سکون سے لگائے. پھر نکال کر دوبارہ ممے دبائے کسنگ کی انتہائ مزہ آرہا تھا دوبارہ سے لنڈ اندر ڈال کر چند مزید جھٹکے لگائے. اس دوران اس نے کہا کہ اب مجھے بھی مزے لینے دو تم نے تو بہت لے لیا. میں حیران ہوا تو اس نے کہا تم لیٹو مجھے اوپر آنے دو. میں لیٹ گیا وہ اوپر آئ . میرا لنڈ پکڑا اپنی چوت پر رکھا آرام آرام سے پورا لنڈ اندر لے لیا. دوبارہ اوپر ہوئ پھر سے نیچے ہوکر لنڈ اندر لے لیا اسی طرح اوپر نیچے ہوکر لنڈ لینے لگی مموں کا حسین نظار تھا. لنڈ پر صحیح رگڑ لگ رہی تھی اسے بھی بے انتہا مزہ آرہا تھا مجھے ایسا لگا کہ منی آنے والی ہے. میں دوبارہ اسے لٹاکر اوپر آگیا اور کسنگ ممے دباتے ہوئے لنڈ اندر ڈال دیا. چند جھٹکے لگائے انزال کے ہوتے مزید جم کر جھٹکے لگائے اور فارغ ہوگیا. آہ ہ ہ بڑا ہی مزے دار سیکس ہوا. جاتے ہوئے اس لڑکی کی رشتہ دار پر نگاہ پڑی. سیکس اسپرے کا یہ تجربہ کامیاب رہا. 10 منٹ تک دورانیہ بڑھ گیا. بہت سکون ملا. سبق :- اسپرے کے بارے میں آپ کو پہلے ہی بتایا تھا کہ نہ استعمال کیا جائے. لوگ پھر بھی ان کے پیچھے دوڑتے ہیں وقت بڑھانے کے لیے مختلف نقصان دہ چیزیں استعمال کرتے ہیں. اگر کسی کو بہت زیادہ مسئلہ ہے وقت کا اور چالو لڑکی گرل فرینڈ کے سامنے شرمندگی سے بچنا ہے تو جس طرح میں نے استعمال کا بتایا 10 منٹ پہلے اور ٹوپی پر. پھر بھی کہوں گا کہ نہ کیا جائے. سکون دہ جگہ دیکھو لڑکی سے بھرپور وقت لو تو آپ کی ٹائمنگ اچھی ہوجائے گی. بھوپور فور پلے کیا جائے.
  3. ہمممم آپ نے خوب مزے کیے. گانڈ کو تو بخش دیتے ہا ہا ہم .آپ نے یہ بات کرکے مجھے تھوڑا حیران کیا. اس کی وجہ کیا ہے کہ کنوارہ پن ٹؤٹنے دیتی ہے جبکہ رونا بھی جاری ہوتا ہے . ڈاکٹر صاحب کیا کہتے ہیں آپ اس بارے میں؟؟؟
  4. ہمممم. نوجوانی کی عمر میں کئ باتیں بہت عجیب جو مشہور ہوئ ہوتی ہیں جیسا آپ نے کہا کہ جلد از جلد لے لو ورنہ ہاتھ سے نکل جائے گی . جب کوئ چیز میسر نہ ہو تو اس کی قدر ہوتی ہے میں نے کچھ سے تعلق بڑھا نہیں پایا ضد کی وجہ سے. آج افسوس ہوتا ہے, کسی لڑکی سے جیسا تعلق ہے سیکس تک اگر بات پہنچ گئ ہے تو کبھی بھی تعلق نہ توڑو کبھی نہ کبھی ضرورت پڑ سکتی ہے جنسی طلب جب حد سے بڑھ جائے تو مسائل ہوجاتے ہیں
  5. ہر کسی کی اپنی پسند ہوتی ہے مجھے کم گو پسند ہے جو خاموش ہو شرم ہو اس کے اندر جھجھک ہو. ثنا کا جو آپ نے تفصیل سے واقعہ شئیر کیا. کمال. بڑی ہمت والے ہیں ڈاکٹر صاحب آپ کہ ٹیچر کے گھر پر ہی سیل توڑی اور آپ نے محسوس بھی کیا واؤووو. روہانسا ہونا منانا راضی کرنا پھر ڈالنے کی تگ ودو کرنا واہ ہ ہ .دوبارہ پلٹ کر نہیں آئ حیرت ہے. آپ نے بالکل ٹھیک کہا کہ بس ایک احساس ہوتا ہے کہ پہلامرد میں ہوں جس کی لی ہے ورنہ چوتوں میں تو کوئ فرق نہیں . صحیح مزہ تو جب ہی آتا ہے کہ جب روانی سے لنڈ اندر باہر جارہا ہو. میں نے تو بہت عرصہ پہلے کنڈم کے بغیر پانچ یا چھ بارسیکس کیا ہوگا تو اب تو وہ چوت لنڈ کی رگڑ کا احساس ہی یاد نہیں.کنوارہ پن ٹوٹنا پھر رفتہ رفتہ چوت کا کھلنا شادی کے بعد بیگم کے ساتھ ٹھیک ہے. ہاں ایسی گرل فرینڈ جس کا کنوارہ پن توڑنے کے بعد بھی آپ اگر مسلسل سیکس جاری رہے تو اچھا ہے. اس کا کلینک ہے مطلب وہ ڈاکٹر صاحب. کبھی دل نہیں کیا کہ اس سے ملا جائے. ویسے اچھا ہے جو گزر گیا جانے دیا
  6. سر جی آپ بڑے خوشقسمت ہیں کہ ایسے وقت میں آپ کو صائمہ کی چوت میسر تھی. پسند تو نہیں تھی لیکن ابھرتی نوجوانی میں مٹھ مارنے سے بہتر ہے کہ چوت مل جائے. میرا دوست کہتا ہے کہ شکل اگر پسند نہیں آرہی تو منہ پر ڈالو کپڑا اور چود ڈالو ہا ہا
  7. ہممم اچھا. اپنے واقعات میں جن کا آپ نے کنوارہ پن توڑا تفصیل سے ذکر کیجیے گا دل چسپی ہوگی اور سیکھنے کو بھی ملے گا کیوں کہ مجھے یہ چانس اب تک نہیں ملا. چوت اگر تنگ ہو تو مزہ تو آتا ہی ہے لیکن چار پانچ جھٹکوں میں منی نکل جاتا ہے . کئ ایسے بھی واقعات سننے کو ملے ہیں جن کا سیکس تجربہ نہیں تھا جنسی طور پر مشتعل تھےشادی کی رات اندر ڈالتے ڈالتے فارغ ہوگئے اندر جا ہی نہیں سکا.
  8. Hidden lover نے کہا نیٹ پریکٹس ہا ہا ڈاکٹر صاحب صائمہ کا کنوارہ پن بھی آپ نے توڑا ہوگا اس کا بتائیں اس وقت کیا منظر تھا
  9. ہا ہا ایساہی ہوتا ہے. میرا امیج بھی لڑکی کے حساب سے بڑا مختلف تھا شروع میں بڑا عجیب لگا جو تصور تھا اس سے ہٹ کر ہوا مثلاً مموں کا بالکل الگ تصور تھا کہ میٹھے ہوں گے جب نپل منہ میں ڈالیں گے تو کیا ہی مٹھاس ہوگی. لیکن الٹ ہوا ہا ہا. اصل میں سارہ مزہ دماغ کی تاروں اور لنڈ کے جوڑ کا ہے جیسے ہی فارغ ہوئے. کوئ حسین سے حسین لڑکی بٹھادی جائے آپ کا دل مائل ہی نہیںہوگا . جب تک کہ دوبارہ لنڈ میں طاقت نہیں آتی
  10. واؤوو مزہ آگیا دوست کمال. یہی مزہ ہے پہلے باتیں پھر سیکس پر بات پھر ملاقات. آپ نے اپنا لنڈتو چسوایا . آپ نے ممے وغیرہ نہیںچوسے دوبارہ ملاقات سیکس نہیں ہوا.
  11. صائمہ نے تو ڈاکٹر صاحب مزے کرادیے. آپ نے اٹھتی جوانی میں خوبمزہ اور تجربہ حاصل کیا. مموں کے درمیان رگڑ کر فارغ اففف آپ نے تو انگریزی فلمی سین بنادیا. اس کا اتنی خاموشی سے کرانا کبھی کچھ بولنا نہیں یہ اس کی عادت مزاج تھا اس کو شوق بہت تھا اگر نہ ہوتا تو اتنا نہ آتی. دوست کا آپ نے بتایا وعدہ بھی کیا کہ لے کر دے گا لیکن دی نہیں. سر چوت بڑی عجیب شہ ہے دوستوں کی وفاداریاں بدلجاتی ہیں.
  12. انسان سمجھتا ہے کہ اس نے تمام احتیاطی تدابیر اپنالی ہیں جب کہ قدرت کو اور ہی منظور ہوتا ہے. جس طرح مجرم اپناسراغ چھوڑ جاتا ہے اسی طرح ممے, کولہے. منی بھی اپنا سراغ چھوڑ جاتے ہیں. ہا ہا ویسے ہی کہہ دیا. اس بات سے ایک واقعہ یاد آگیا کروں گا شئیر
  13. واہ ڈاکٹر صاحب شاندار. صائمہ نے آپ کو مزے بھی کرائے تجربہ سے خوب نوازا. آپ نے اس سے مختلف پوزیشن سے کیا اور ٹائمنگ پر بھی کنٹرول حاصل کیا. بہت ہی خوب آرام دہ سیکس ہی سے بہت کچھ حاصل ہوتا ہے. شادی کے موقع پر سیڑھیوں پر کیا حمل ٹھہر گیا شکر ہے مانع حمل ادویات بھی ہیں ورنہ کیا ہوتا. آخری کرن کا پڑھ کر بہت ہی مزہ آیا. ہا ہا.. کرن ہاتھ سے نکل گئ آپ جو اسے تیار کررہے تھے صائمہ کے آنے پر وہ ٹیمپو ٹوٹ گیا. ورنہ اس کی بھی لے لیتے. ڈاکٹر صاحب بہت شکریہ کہ اتنی لمبی پوسٹ کی.
  14. ہممم. بہت شکریہ دوست. اس تھریڈ بنانے کا مقصد یہی ہے کہ حقیقی واقعات سے لطف اٹھایا جائے. جو تجربات اسباق ملیں انہیں بتایا جائے تاکہ کسی نے جو ٹھوکر کھائ ہے اس سے دوسرا بندہ سبق حاصل کرسکے. آپ کے واقعات کا انتظار رہے گا
  15. میں اور میرا دوست بہت سی نئ چیزیں کرنے کی کوشش کرتے ہیں. کال گرلز جگہیں ہمارے پاس تو ہیں لیکن اکثر دیکھا ہے کہ نمائش چورنگی پر آنٹیاں لڑکیاں گاہکوں کی تلاش میں کھڑی ہوتی ہیں زیادہ تر آنٹیاں ہوتی ہیں. ہم نے سوچا کہ ٹرائ کرتے ہیں ہوسکتا ہے کہ نئ جگہ میں مناسب قیمت پر اچھا مال ملے. ایک آنٹی کھڑی تھی اس سے بات کی. اس نے ایڈوانس 2000 لیے ہم نے اسے بائیک پر بٹھایا وہ ہمیں ایم اے جناح روڈ صدر سے ہوتے رنچھوڑ لائن گھماتے ہوئے پیچھے لے گئ. خاصا گنجان آباد علاقہ تھا مصروف روڈ لائن سے فلیٹ,4 5 منزلہ. ہمیں ایک مٹھائ کی دکان پر روکا. اس کے پیچھے فلیٹ کے اوپریپورشن میں لے گئ. وہاں پر ایک موٹی لڑکی تھی بھدی سی وہی لیڈر تھی تین لڑکیاں موجود تھیں. ایک تو بالکل پتلی کالی دوسری کچھ خاص نہیں ایک گزارہ تھی. میں نے دل میں سوچا کہاں پھنس گئے یار. خیر اب آچکے میں نےبحث شروع کردی کہ کہاں لے آئ ہو یہ کوئ مال ہے. اب اوپر یہ افتاد آپڑی کہ وہ موٹی کہتی ہے ایک لڑکی کے 500 دو اوپر جو جیب خرچی 100 200 لڑکی کو دے دینا. میں نے کہا کہ آنٹی کو 2000 ایڈ وانس دیے ہوئے وہ لانے والی نے بولا کہ یہ تو میرے لانے کا ہے میں نے کہاں واہ. 500 لے لو کہتی ہے نہیں وہ 2000 تو میرے ہیں. میں نے تھوڑا شور مچایا لیکن ایسی جگہ پر آپ کو پتا ہے بندہ کیا کرسکتا ہے. جگہ بالکل انڈین موویز میں چکلے نہیں دکھاتے اس طرح کی تھی. اندھیرا پورشن بنے ہوئے 5 6 اندر سلیب لگی ہوئ. بس پردہ پڑا ہوا تھا. 1000 ادا کیے ایک کو میں لے گیا دوسرے کو دوست. . اندر لے آکر اسے کھڑے کھڑے گلے لگایا چوما ممے دبائے اس کے کپڑے اتار دیے. اس کے ممے متناسب تھے خوب دبائے چومے چاٹے اسے ننگا کرکے لٹا دیا. اندھیرے میں بہت مزہ آرہا تھا ہلکی روشنی میں جو لڑکی کے اعضاءنظر آرہے تھے اس سے شدید جنسی تناؤ چڑھ گیا. سلیب کی وجہ سے پوزیشن بھی مزے دار بن گئ میں نے کھڑے ہی کنڈم چڑھاکر لنڈ اندر ڈال دیا. چند جھٹکے لگا کر نکال لیا. پھر اس کے خوب ممے دبائے چوما. میں نے باتوں باتوں میں کہا کہ ایک ور شاٹ مار لوں تمہیں ہی 500 سےدے دوں گا اس نے کہا کہ موٹی کو شک ہوجائے گا. خیر میں نے دوبارہ اندر ڈال دیا. چند مزید جھٹکے لگا کر فارغ ہوگیا.. چند یادگار چدائیوں میں سے ایک چدائ تھی بالکل انڈین فلمی مناظر تھے. جس طرح بچپن میں سوچتے تھے سنتے تھے کہ لائن سے کمرہ ہوتے ہیں باہر پیسہ دو اندر جاکر پسند کرلو بالکل وہی ماحول تھا . وہاں سے پھر ہم واپس ہولیے. جس کو چودا تھا اس کا نام سدرہ تھا. میں دوبارہ وہاں گیا کوشش کرکے وہ جگہ دیکھی مل گئ. فلیٹ میں جو رستہ تھا اس کے باہر بابا نے چیزوں کا ٹھیلہ لگایا تھا. پچھلی بار اس پر نظر پڑی تھی. اسے اشارہ کیا اس نے کہا مجھے 50 روپے دو اسے دیے اندر گیا سیڑھیوں کے پاس بوڑھی کوئ 75 80 سال کی رکھوالی پر بیٹھی تھی. اوپر گیا 500 روپے ادا کیے لڑکیاں گزارہ تھی. ایک پر شک ہوا کہ سدرہ ہے لیکن یقین نہیں آیا میں نے پوچھا سدرہ ہےموٹی آنٹی چونک گئ ساتھ میں ایک لڑکی بھی چونکی میں نے پہچان لیا ہا ہا کیا منظر تھا. اسے لے کر اندر گیا اسے بولا پریشان مت ہو آخری دفعہ تمہیں کیا تھا تو نام یاد ہے تو پھر اس کو تسلی ہوئ. رنڈیوں کے بھی عجیب ڈر ہیں. خیر دوبارہ والی چدائ کا منظر کچھ خاص یاد نہیں آرہا. وہ والا مزہ نہیں آیا جو پہلے آیا روشنی زیادہ تھی اس وجہ سے خیر چود کر فارغ ہوگیا. وہ جگہ ٹھیک نہیں. جانے کا بہت دل کرتا ہے لیکن اس پر چھاپا پڑنے کے بہت چانسس ہیں اس لیے نہیں جاتا. ایک بار اس طرف ایک کام سے گیا تھا تو ادھر بھی گیا لیکن واپس آگیا اسباق :- نمائش چورنگی مزار قائد کے پاس,سفاری پارک یونی ورسٹی روڈ پر یا اور جو بھی اس قسم کی جگہیں ہیں وہاں کی آنٹیوں کو آپ اپروچ نہ کریں نقصان میں رہیں گے. اس آنٹی کو آج بھی سفاری پارک کے پاس دیکھتا ہوں.. اس طرح کی آنٹیاں ایک نمبر کی دھوکہ باز ہوتی ہیں. اس طرح کی جگہوں سے بچیں.
×
×
  • Create New...